میری زندگی انتہائی مشکل کیوں ہے؟ مفتی اسماعیل مینک دوسرا حصہ

میری زندگی انتہائی مشکل کیوں ہے؟ مفتی اسماعیل مینک

دوسرا حصہ

اور وہ خوش اور مسرور ہے لیکن آپ اس کی طرح ایک انسان ہیں وہ یہ کیسے کر رہا ہے کہ یہ اللہ کا تحفہ ہے اور وہ آپ سے زیادہ خوش ہے پھر بھی آپ کی جیب میں ایک ہزار اصلی ہیں کہ اللہ اس کو اپنائے یہی امتحان ہے۔ ایک ایسی چیز ہے جس کے بارے میں ہمیں واقعی سوچنے کی ضرورت ہے کہ آپ اپنے ٹیسٹ پر افسردہ نہ ہوں کیونکہ آپ کا امتحان دوسرے لوگوں کے لیے ان کی حقیقی زندگی میں ایک تحفہ سمجھا جاتا ہے کیا اس کا مطلب ہے کہ میں نے بغیر ٹانگوں والے لوگوں کو دیکھا ہے اور وہ بہت خوش ہیں کہ میں ایک آدمی سے ملا ہوں۔ جو کئی سالوں سے ہل نہیں سکتا اللہ اسے شفا عطا فرمائے وہ اوپر سے نیچے تک مفلوج ہے وہ اپنی آنکھوں سے بات کرتا ہے اللہ اسے شفا دے لیکن اگر آپ اسے دیکھیں گے تو آپ اس سے بات کریں گے آپ کو حوصلہ ملے گا کیونکہ مجھ پر اس کی قناعت اور خوشی پر بھروسہ ہے اللہ اللہ کی مرضی سے ہم میں سے بہت سے لوگوں سے بہت بڑا ہے جو آج یہاں بیٹھے ہیں ہمارے چھوٹے چھوٹے مسائل ہیں اس لیے مایوس نہ ہوں مسائل یہی ہیں دنیا کا یہی حال ہے میں آج آپ کو یہ بتانے آیا ہوں کہ مشکلات آپ کی زندگی میں سے شروع ہو جائے گا آپ کے خلاف کچھ لکھنے سے پہلے ہی آپ کی مشکلات شروع ہو چکی ہیں آپ جانتے ہیں کہ اللہ کہتا ہے کہ آپ کے اعمال بالغ ہونے کی عمر میں لکھے جائیں گے جب آپ بالغ ہو جائیں گے تو قلم اٹھایا جائے گا اور اس وقت آپ کے حق میں یا آپ کے خلاف باتیں لکھی جائیں گی۔ عمر لیکن آپ کی مشکلات اس سے پہلے شروع ہو جاتی ہیں کہ معصوم بچے کبھی کبھی آپ اپنے آپ سے پوچھتے ہیں کہ اللہ سبحانہ وتعالیٰ نے اس بچے کا گردہ فیل کیوں کیا ہے اللہ کرے جن کے گردے فیل ہیں اللہ نے اس معصوم بچے کا ٹیسٹ کیوں کرایا؟ بچہ دیکھ نہیں سکتا معصوم بچہ یہ نہیں سن سکتا کہ سب ایک امتحان ہے اللہ جانتا ہے کہ یہ آپ کے لیے کیوں امتحان ہے جو بچے کے ارد گرد ہیں جیسے بچے کے لیے اللہ جانتا ہے کہ یہ اللہ کا بچہ ہے زمین پر آنے سے پہلے


اور یہ اللہ سبحانہ و تعالیٰ کے پاس واپس جائے گا اور شاید اللہ اس بچے کو جنت میں اعلیٰ مقام عطا فرمائے گا یہ ایک حیرت انگیز بات ہے اور ہمیں یقیناً اللہ کے اس منفرد نظام کے بارے میں سوچنے کی ضرورت ہے تاکہ میرے بھائیوں اور بہنوں جیسے جیسے بچہ بڑا ہوتا جائے اور بچہ ایک سوال پوچھنے لگتا ہے اور میں شادی کی بات پر پہنچ گیا اور بچہ کہہ رہا ہے کہ میں شادی کرنا چاہتا ہوں پلیز غور کریں بچہ کیا کہہ رہا ہے جو کہتے ہیں میں شرمندہ ہوں کہ لوگ کیا کہیں گے انہیں سمجھنے کی ضرورت ہے شرمندگی اس بات پر کہ اللہ کیا کہے یا یاد کرے یہ لوگ گھر آ کر کہنا شروع کر دیتے ہیں کہ یہ لوگ کیا کہنے جا رہے ہیں واللہ کیا آپ واقعی اللہ سبحانہ و تعالیٰ کی امانت کو پورا کرنے کی زحمت اٹھا رہے ہیں اگر ایسا ہے تو دیکھیں اس کو خوبصورت طریقے سے پورا کریں اگر آپ کے پاس مناسب وجوہات ہیں تو ماشاء اللہ اپنے بچے سے بات کریں اس حقیقت کو استعمال نہ کریں اوہ آپ کو معلوم ہے کہ ہمارے خاندان میں ایسا نہیں ہوتا کیا آپ کا تعلق بطور خاندان اسلام سے نہیں ہے۔ ہم خاندان نہیں کیا آپ میرے خاندان کا حصہ نہیں ہیں میں آپ کے خاندان کا حصہ ہوں ہمارے پاس دین ہے ہمارے پاس اسلام ہے سبحان اللہ اس لیے یہ مت کہو کہ آپ میرے خاندان میں میرا قبیلہ جانتے ہیں وہ اس کی اجازت نہیں دیتے آپ ہماری ثقافت کو جانتے ہیں اگر آپ کا کلچر متفق ہے اسلام کے ساتھ یہ ایک خوبصورت ثقافت ہے۔


اگر دو تین عناصر اسلام کے خلاف ہیں تو آپ کو انہیں چھوڑنا ہوگا کیونکہ اسلام پہلے آتا ہے میں کہہ رہا ہوں کہ ہاں ایک آئیڈیل ہوتا ہے ہر والدین کا کوئی نہ کوئی خواب ہوتا ہے لیکن کیا میں آپ کو وہ حقیقت بتا سکتا ہوں چاہے آپ اسے پسند کریں یا نہ کریں آپ کو ایڈجسٹ کرنا پڑے گا؟ تیرا خواب آنسوؤں سے گزرتا ہے تو غصہ نہ کرے گا اداس ہو جائے گا ہم میں سے بہت سے جب ہم جوان تھے ایک خواب دیکھا تھا ایک دن میں یہ کروں گا ایک دن کروں گا ایک دن کروں گا میں یہ کروں گا اور تم مجھے آپ کا خواب بدلنا پڑا مجھے یقین ہے کہ آپ نے اس شخص کے بارے میں کہانی سنی ہوگی جس کے بارے میں میں نے کچھ عرصہ قبل اس مسجد میں کہا تھا اور میں اسے دوبارہ کہنا چاہتا ہوں کہ وہ آدمی جو ایک پورٹر تھا اور اس نے ایک خواب دیکھا تھا کہ ایک دن میں کسی مالدار کا سامان لے جاو اور مجھے کچھ پیسے ملیں گے اور میں کچھ کروں گا تو کیا ہوا وہ ٹرین سٹیشن پر تھا اور وہاں ایک آدمی تھا جو ریل سے نکلا تھا جو دودھ کا دودھ لے کر ٹرین کی طرف آیا۔ کوئی بڑا ڈبہ کر سکتا ہے اور وہ ایک امیر آدمی تھا اس وقت دودھ کی کمی تھی تو دودھ پینا بڑی چیز ہے تو اس نے کہا کیا آپ اسے لے جا سکتے ہیں اس آدمی نے کہا ہاں میں یہ آپ کے لیے لے جاؤں گا اور اس نے کہا کہ میں آپ کو ایک اچھی رقم دوں گا اس کے لیے اچھی رقم اتنی ہے کہ آدمی نے ڈبہ لیا اور اسے اپنے سر پر رکھ دیا۔ اور وہ بہت خوش چل رہا تھا آج اس کا خواب پورا ہو رہا ہے کیوں کہ مجھے بہت سارے پیسے ملنے والے ہیں اور آپ جانتے ہیں کہ ان کے پاس ایک ہنر ہے پورٹرز اگر آپ نے انہیں دیکھا ہے تو وہ اپنے سر پر کچھ رکھتے ہیں ان کے پاس ڈالنے کا ہنر ہے۔ اوپر کوئی چیز ہے جسے پکڑے بغیر اور وہ چلا بھی سکتے ہیں وہ گرے گا نہیں وہ چلا بھی سکتے ہیں یہ نہیں گرے گا کیونکہ وہ جانتے ہیں کہ وہ اپنے شعبے کے ماہر ہیں سبحان اللہ اس نوجوان کے پاس یہ چیز ہے اور وہ پیدل چل رہا ہے۔


اور وہ آدمی کہتا ہے دیکھو تم جو بھی کرتے ہو دودھ مت گراؤ اس نے کہا نہیں میں فکر نہیں کروں گا میں نہیں کروں گا تو وہ چل رہا ہے اور چلتے چلتے وہ میرے بارے میں سوچ رہا ہے کہ میں اس کے لیے کہوں گا مثال کے طور پر اس آدمی سے سو ڈالر یا دس ڈالر جو کچھ بھی تھا میں وہاں سے دو مرغیاں خریدوں گا جب مرغیاں انڈے دیں گی جب وہ انڈے دیں گے تو میں انڈے بیچنا شروع کروں گا پھر میں مزید مرغیاں خریدوں گا اس سے پہلے کہ مجھے معلوم ہو کہ میں لینے جا رہا ہوں۔ ایک غلط بھاگ دوڑ اور میرے پاس بہت سی مرغیاں ہوں گی وہ انڈے دیں گی اور میں خود بھی مرغیاں بیچنا شروع کر دوں گا تو اب میں ایک ایسا شخص ہوں گا جو مرغیاں اور انڈے بیچتا ہوں اور کچھ عرصے بعد میں کچھ بھیڑیں خریدوں گا اور پھر میرے پاس ہو گا۔ میرے پاس ایک چھوٹا سا فارم ہو گا اور میں ایک طرف بڑھنے کے قابل ہو جاؤں گا میرے پاس میری مرغیاں ہوں گی میرے انڈے ہوں گے اور دوسری طرف میرے پاس بھیڑیں اور بکریاں ہوں گی شاید میں بکریوں کا کچھ دودھ بیچنا چاہوں گا اور ہو سکتا ہے کہ میں بیچنا چاہتا ہوں۔ بھیڑ اور میں قصاب کھولوں گا میں قصاب بنوں گا اور کچھ عرصے بعد میں زمین کا ایک بڑا ٹکڑا خریدوں گا اور میں ہوں کچھ گائے خریدنے جا رہا ہوں جب میں گائے خریدوں گا ہم دودھ بیچیں گے ہم گائے بیچیں گے ہم اتنی چیزیں بیچیں گے واہ میں 200 300 لوگوں کو روزگار دوں گا اور 

Post a Comment

Previous Post Next Post